سب سے زیادہ ٹیسٹ رنز، رکی پونٹنگ دوسرے نمبر پر آ گئے

آسٹریلیا کے عظیم بلے باز رکی پونٹنگ ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے بازوں میں دوسرے نمبرپر آ گئے۔ روسیو، ڈومینکا کے خوبصورت میدان ونڈسر پارک میں کھیلے جا رہے تیسرے ٹیسٹ کے دوران انہوں نے شین شلنگ فرڈ کو چوکا رسید کیا تو وہ بھارت کے راہول ڈریوڈ کو پھلانگ کو اس فہرست میں دوسرےنمبر پر آ گئے۔ حال ہی میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کرنے والے راہول نے اپنے ٹیسٹ کیریئر میں 13 ہزار 288 رنز بنا رکھے تھے جبکہ رکی کے رنز کی تعداد اب 13 ہزار 289 ہو چکی ہے۔ گو کہ سابق کپتان اس کے بعد مزید کوئی رن نہ بنا سکے اور بالآخر شلنگ فرڈ ہی کی گیند پر لیگ سلپ پر حریف کپتان ڈیرن سیمی کے کیچ کا شکار بن گئے۔

(تصویر: Getty Images)

(تصویر: Getty Images)

1995ء میں اپنے ٹیسٹ کیریئر کا آغاز کرنے والے رکی پونٹنگ اب تک 41 سنچریاں اور 61 نصف سنچریاں بنا چکے ہیں اور ان کا بہترین اسکور 257 رنز ہے۔ 165 ویں میچ میں شریک رکی 52.73 کے شاندار اوسط کے حامل ہیں اور 29 مرتبہ ناقابل شکست باریاں کھیل چکے ہیں۔

رکی پونٹنگ کی زیر قیادت آسٹریلیا نے طویل عرصے دنیائے کرکٹ پر حکمرانی پر مزا چکھا ہے۔ جس کے دوران نہ صرف ٹیسٹ میں پے در پے کی سیریز جیتنا شامل ہے بلکہ مسلسل دو عالمی کپ میں ناقابل شکست رہ کر ٹورنامنٹ جیتنا بھی ان کا کارنامہ ہے۔ انہی کے دور کپتانی میں آسٹریلیا تاریخ کی بہترین ٹیموں میں شمار ہوا اور رکی نے اپنی کارکردگی کو نمونہ بنا کر ٹیم کو آگے بڑھایا۔ البتہ گزشتہ ایشیز سیریز میں انگلستان کے ہاتھوں بدترین شکست اور پھر عالمی کپ 2011ء میں کوارٹر فائنل میں ہار نے ان سے قیادت تو لے لی گئی لیکن وہ ٹیم کا بدستور حصہ رہے۔

ہم ذیل میں کرک نامہ قارئین کی دلچسپی کے لیے ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں سب سے زیادہ کیریئر رنز بنانے والے بلے بازوں کی فہرست پیش کر رہے ہیں۔ اس میں سب سے نمایاں نام بھارت کے سچن تنڈولکر کا ہے جو 15470 رنز کے ساتھ اس وقت سب سے آگے ہیں۔

ٹیسٹ کیریئر میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے باز

نام ملک دورانیہ مقابلے اننگز رنز بہترین اننگز اوسط سنچریاں نصف سنچریاں
سچن تنڈولکر بھارت 1989ء تا حال 188 311 15470 248* 55.44 51 65
رکی پونٹنگ آسٹریلیا 1995ء تا حال 165* 281 13289 257 52.73 41 61
راہول ڈریوڈ بھارت 1996ء تا 2012ء 164 286 13288 270 52.31 36 63
ژاک کیلس جنوبی افریقہ 1995ء تا حال 152 257 12379 224 56.78 42 55
برائن لارا ویسٹ انڈیز 1990ء تا 2006ء 131 232 11953 400* 52.88 34 48
ایلن بارڈر آسٹریلیا 1978ء تا 1994ء 156 265 11174 205 50.56 27 63
اسٹیو واہ آسٹریلیا 1985ء تا 2004ء 168 260 10927 200 51.06 32 50
مہیلا جے وردھنے سری لنکا 1997ء تا حال 130 217 10440 374 51.17 31 41
سنیل گاوسکر بھارت 1971ء تا 1987ء 125 214 10122 236* 51.12 34 45
شیونرائن چندرپال ویسٹ انڈیز 1994ء تا حال 140* 237 9918 203* 49.83 25 57
کمار سنگاکارا سری لنکا 2000ء تا حال 108 183 9382 287 54.86 28 38
گراہم گوچ انگلستان 1975ء تا 1995ء 118 215 8900 333 42.58 20 46
جاوید میانداد پاکستان 1976ء تا 1993ء 124 189 8832 280* 52.57 23 43
انضمام الحق پاکستان 1992ء تا 2007ء 120 200 8830 329 49.60 25 46
وی وی ایس لکشمن بھارت 1996ء تا حال 134* 223 8728 281 46.17 17 56
میتھیو ہیڈن آسٹریلیا 1994ء تا 2009ء 103 184 8625 380 50.73 30 29
ویوین رچرڈز ویسٹ انڈیز 1974ء تا 1991ء 121 182 8540 291 50.23 24 45
ایلک اسٹیورٹ انگلستان 1990ء تا 2003ء 133 235 8463 190 39.54 15 45
ڈیوڈ گاور انگلستان 1978ء تا 1992ء 117 204 8231 215 44.25 18 39
جیفری بائیکاٹ انگلستان 1964ء تا 1982ء 108 193 8114 246* 47.72 22 42

ویسٹ انڈیز اور آسٹریلیا کے درمیان روسیو، ڈومینیکا میں تیسرے و آخری ٹیسٹ کے پہلے دن کے اسکور اس جدول میں شامل ہیں۔

Article Tags

Facebook Comments