گریم اسمتھ ایک روزہ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے فیصلے پر ثابت قدم

جنوبی افریقہ کے کپتان گریم اسمتھ نے کہا ہے کہ اگر پروٹیز عالمی کپ جیت بھی جاتے ہیں تب بھی وہ ایک روزہ بین الاقوامی مقابلوں سے اپنی ریٹائرمنٹ کا فیصلہ واپس نہیں لیں گے۔

انہوں نے عالمی کپ سے قبل اعلان کیا تھا کہ وہ ٹورنامنٹ کے بعد ایک روزہ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لیں گے اور اپنی تمام تر توجہ ٹیسٹ کرکٹ پر مرکوز رکھیں گے۔

گریم اسمتھ نے 2003ء میں صرف 22 سال کی عمر میں جنوبی افریقہ کی قیادت سنبھالی تھی۔ ملکی تاریخ کے کم عمر ترین کرکٹ کپتان تھے۔ وہ ٹی ٹونٹی اسکواڈ کی قیادت پہلے ہی یوہان بوتھا کے حوالے کر چکے ہیں۔ البتہ وہ ٹیسٹ دستے کی قیادت جاری رکھنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ عالمی کپ کئی وجوہات کی بناء پر ان کے لیے بہت زیادہ اہم ہے۔ البتہ انہیں افسوس ہے کہ وہ اپنی بلے بازی کے ذریعے ٹیم کی فتوحات میں بڑا حصہ نہیں ڈال پا رہے، لیکن ان کا کہنا ہے کہ مجھے پوری امید ہے کہ میں اس وقت فارم میں واپس آؤں گا جب ٹیم کو سب سے زیادہ ضرورت ہوگی۔

اسمتھ نے 2008ء میں انگلستان اور آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں کامیابیوں کو اپنے کیریئر کے بہترین لمحات قرار دیا۔

Facebook Comments