اسد رؤف پھٹ پڑے، ممبئی پولیس کو کھلا چیلنج

انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) کے اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں بدنام ہونے والے پاکستانی امپائر اسد رؤف بالآخر پھٹ پڑے۔ ممبئی پولیس کی جانب سے چارج شیٹ پیش کیے جانے کے بعد انہوں نے لاہور میں پریس کانفرنس کی اور کہا کہ میرے جس سفری بیگ کے بارے میں اودھم مچایا جا رہا ہے اس میں قیمتی زیورات اور گھڑیاں نہيں بلکہ اولیاء کرام کے مزارات کی چادریں اور ان سے منسوب پتھر تھے۔

جس بیگ کے معاملے میں شور مچایا جا رہا ہے اس میں قیمتی زیورات اور گھڑیاں نہیں تھیں: اسد رؤف کا دعویٰ (تصویر: Getty Images)

جس بیگ کے معاملے میں شور مچایا جا رہا ہے اس میں قیمتی زیورات اور گھڑیاں نہیں تھیں: اسد رؤف کا دعویٰ (تصویر: Getty Images)

اسد رؤف نے کہا کہ میں ممبئی پولیس کو کھلا چیلنج کرتا ہوں کہ وہ میرے تھیلے عدالت میں کھولیں اور ثابت کریں کہ جو چارج شیٹ میں بتایا گیا ہے وہ سامان اس سے برآمد ہوا یا نہیں۔

زیر عتاب پاکستانی امپائر نے کہا کہ تحائف لینا کوئی جرم نہیں ہے، یہ ایشیائی تہذیب کا حصہ ہے اور میرے متعلق جس ٹیلی فونک گفتگو کی ریکارڈنگ کو جواز بنایا جا رہا ہے اس میں بھی میں نے کسی فکسنگ کی حامی نہیں بھری بلکہ وندو دارا سنگھ کو صرف اتنا کہا تھا کہ میرا سامان ممبئی سے دہلی پہنچوا دو کیونکہ وندو کی انڈین ایئرلائنز میں اچھی جان پہچان تھے۔

انہوں نے کہا کہ فی الحال حالات سازگار نہیں کہ میں ممبئی جا سکوں لیکن میں اپنے سامان کی واپسی کے لیے پولیس سے رابطہ ضرور کروں گا۔

وکیل کے ہمراہ کی گئی پریس کانفرنس میں اسد رؤف نے کہا کہ وہ تنازع سے پہلے ہی کہہ چکے تھے کہ بین الاقوامی امپائرنگ مزید جاری نہیں رکھ سکیں گے تاہم اس واقعے کے بعد انہوں نے ریٹائرمنٹ کا اعلان موخر کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے آئی سی سی کو اپنی جائیداد اور سم کارڈو وغیرہ کی تفصیلات فراہم کی تھیں لیکن تین ماہ گزرجانے کے باوجود بین الاقوامی کرکٹ کونسل نے میرے خلاف کوئی تحقیقات نہیں کیں اور نہ ہی کوئی شوکاز نوٹس جاری کیا، یہی میرے بے گناہی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

57 سالہ اسد رؤف اس وقت تنازع کی زد میں آئے جب رواں سال اسپاٹ فکسنگ کے الزام میں بالی ووڈ کے اداکار وندو دارا سنگھ بھی گرفتار ہوئے اور کیونکہ اسد کے وندو سے قریبی روابط تھے۔ یہی وجہ ہے کہ انہیں فوری طور پر امپائرنگ سے روک دیا گیا۔ اسد رؤف ماضی میں بھارتی ماڈل لینا کپور کے ساتھ اپنے جنسی اسکینڈل کے باعث بھی اخبارات کی شہ سرخیوں میں آئے تھے۔

Facebook Comments