[ریکارڈز] ٹی ٹوئنٹی میں کم ترین اسکور پر آؤٹ ہونے والی ٹیمیں

نیدرلینڈز کے بلے باز جو محض چند روز قبل آئرلینڈ کے خلاف تاریخی فتح سمیٹنے کے بعد آسمانوں پر اڑ رہے تھے، آج ورلڈ ٹی ٹوئنٹی اعزاز کے بہترین امیدوار سری لنکا کے سامنے بھیگی بلے بن گئے اور تاریخ کے کم ترین اسکور 39 رنز پر ڈھیر ہوگئے۔ ٹیم کا صرف ایک بلے باز دہرے ہندسے میں داخل ہو پایا جبکہ چار تو صفرکی ہزیمت سے دوچار ہوئے۔

نیدرلینڈز نے چند روز قبل 191 رنز کا مجموعہ چودہویں اوور میں حاصل کیا تھا اور آج صرف 39 رنز پر ڈھیر ہوگیا (تصویر: Getty Images)

نیدرلینڈز نے چند روز قبل 191 رنز کا مجموعہ چودہویں اوور میں حاصل کیا تھا اور آج صرف 39 رنز پر ڈھیر ہوگیا (تصویر: Getty Images)

یوں نیدرلینڈز نے ٹی ٹوئنٹی کی تاریخ میں کم ترین اسکور پر آؤٹ ہونے کا کینیا کا وہ ریکارڈ توڑ دیا جو گزشتہ سال ستمبر میں شارجہ کے مقام پر افغانستان کے خلاف بنایا گیا تھا۔ توقعات کے عین مطابق ابتدائی تمام کم ترین مجموعے نوآموز ٹیموں کے ہی ہیں جن میں نیدرلینڈز اور کینیا کے علاوہ آئرلینڈ، ہانگ کانگ، برمودا اور افغانستان کے نام ہیں جبکہ بین الاقوامی کرکٹ کونسل کی مکمل رکنیت رکھنے والے ممالک میں سب سے کم اسکور پاکستان اور بھارت کا ہے۔ پاکستان ستمبر 2012ء میں دبئی میں آسٹریلیا کے خلاف کھیلے گئے ٹی ٹوئنٹی میں صرف 74 رنز پر ڈھیر ہوگیا تھا جبکہ بھارت نے یہ "اعزاز" آسٹریلیا ہی کے خلاف فروری 2008ء میں ملبورن کے مقام پر 74 رنز پر آؤٹ ہوکر حاصل کیا تھا۔

ہم قارئین کی دلچسپی کے لیے ٹی ٹوئنٹی تاریخ کے کم ترین اسکورز بنانے والی ٹیموں اور ان مقابلوں کی مختصر تفصیلات یہاں پیش کررہے ہیں، امید ہے قارئین کے لیے دلچسپی کا باعث ہوں گی۔

ٹی ٹوئنٹی تاریخ کے کم ترین مجموعے

ملک رنز اوورز بمقابلہ بمقام بتاریخ
نیدرلینڈز نیدرلینڈز 39 10.3  سری لنکا چٹاگانگ 24 مارچ 2014ء
 کینیا 56 18.4  افغانستان شارجہ 30 ستمبر 2013ء
 کینیا 67 17.2 آئرلینڈ بیلفاسٹ 4 اگست 2008ء
آئرلینڈ 68 16.4 ویسٹ انڈیز پروویڈنس 30 اپریل 2010ء
 ہانگ کانگ 69 17.0 نیپال چٹاگانگ 16 مارچ 2014ء
 برمودا 70 20.0 کینیڈا بیلفاسٹ 5 اگست 2008ء
 کینیا 71 19.0 آئرلینڈ دبئی 14 مارچ 2012ء
 افغانستان 72 17.1 بنگلہ دیش ڈھاکہ 16 مارچ 2014ء
 کینیا 73 16.5 نیوزی لینڈ ڈربن 12 ستمبر 2007ء
 پاکستان 74 19.1 آسٹریلیا دبئی 10 ستمبر 2012ء
 بھارت 74 17.3 آسٹریلیا ملبورن یکم فروری 2008ء

Facebook Comments