بورڈ کی تنبیہ، محسن خان کا مستعفی ہونے کا فیصلہ مؤخر

پاکستان کے چیف سلیکٹر محسن حسن خان نے ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے لیے ٹیم کےانتخاب پر تنازع پیدا ہونے کے بعد استعفیٰ دینے کا ارادہ کر لیا تھا لیکن بدھ کو پریس کانفرنس سے کچھ پہلے فیصلے کو مؤخر کرتے ہوئے پاکستان کرکٹ بورڈ کے حکام سے ملاقات کا ارادہ کر لیا ہے تاکہ 15 رکنی دستے کے انتخاب پر پیدا ہونے والے تنازعات کو حل کیا جاسکے۔

محسن حسن خان، سربراہ قومی سلیکشن کمیٹی

مذکورہ اعلان سے قبل پاکستان کرکٹ بورڈ نے جاری کردہ خبری اعلامیہ میں محسن حسن خان کو چیئرمین پی سی بی سے ملاقات کرنے اور معاملات کو حل کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔ تاہم محسن خان نے اپنی اہلیہ کی ناسازئ طبیعت کا بہانہ بنا کر ملنے سے انکار کر دیا۔ اسی اعلامیہ میں پی سی بی نے محسن خان کی مجوزہ پریس کانفرنس کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی قرار دیا گیا ہے۔

اس اعلامیہ کے اجراء کے بعد محسن خان نے پریس کانفرنس کا ارادہ ملتوی کرتے ہوئے چیئرمین اعجاز بٹ سے ملاقات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کرک نامہ کے ذرائع کے مطابق محسن حسن خان اور سلیکشن کمیٹی کے درمیان وکٹ کیپر کے انتخاب پر تنازع کھڑا ہوا ہے۔ محسن خان پاکستان کی گزشتہ ٹیسٹ سیریز میں عدنان اکمل کی متاثر کن کارکردگی کے باعث ان کی شمولیت کے خواہاں تھے جبکہ دیگر اراکین ویسٹ انڈیز میں پاکستان کی ایک روزہ ٹیم کے ساتھ موجود محمد سلمان کی کارکردگی سے مطمئن دکھائی دیے اور بالآخر اتفاق رائے سے فیصلہ سلمان کے حق میں ہوا۔

محسن خان نے تنازع کے سلسلے میں کراچی میں پریس کانفرنس طلب کی تھی، تمام صحافی اس میں شرکت کے لیے پہنچ گئے لیکن چیف سلیکٹر صاحب بورڈ کی جانب سے ایک فون کال پر واپس پلٹ گئے۔

Article Tags

Facebook Comments