[ریکارڈز] عالمی کپ میں ہٹ وکٹ ہونے والے بلے باز

کرکٹ میں عام طور پر بلے بازوں کو بولڈ، کیچ، ایل بی ڈبلیو، اسٹمپڈ اور رن آؤٹ ہوتے تو دیکھا جاتا ہے لیکن ہٹ وکٹ اور دیگر طریقوں سے بہت کم بلے باز آؤٹ ہوتے ہیں۔ عالمی کپ 2015ء میں متحدہ عرب امارات اور زمبابوے کے مقابلے کے دوران ایک بلے باز ہٹ وکٹ ہوا۔

عالمی کپ میں پہلا ہٹ وکٹ پہلے فائنل میں پہلی وکٹ کی صورت میں ہوا، جب روئے فریڈرکس چھکا لگاتے ہوئے وکٹوں پر گر گئے تھے (تصویر: PA Photos)

عالمی کپ میں پہلا ہٹ وکٹ پہلے فائنل میں پہلی وکٹ کی صورت میں ہوا، جب روئے فریڈرکس چھکا لگاتے ہوئے وکٹوں پر گر گئے تھے (تصویر: PA Photos)

286 رنز کے ہدف کے تعاقب میں جب زمبابوے 22 اوورز میں 112 رنز تک پہنچ چکا تھا تو اسے اننگز کو استحکام دینے کی ضرورت تھی لیکن متحدہ عرب امارات کے کپتان محمد توقیر کی ایک گیند کھیلتے ہوئے زمبابوے کے اہم بلے باز ریگس چکابوا اتنا پیچھے چلے گئے کہ ان کا ایک پیر وکٹوں سے جا لگا۔ 35 رنز کی اننگز اپنے اختتام کو پہنچی اور زمبابوے کو مزید مشکلات سے دوچار کرگئی۔ بعد ازاں شاں ولیمز اور کریگ اروائن نے انہیں بچایا اور زمبابوے مقابلہ جیتنے میں کامیاب ہوگیا۔

چکابوا کا یہ ہٹ وکٹ عالمی کپ کی تاریخ میں آٹھواں موقع ہے کہ جب کوئی کھلاڑی اس انوکھے انداز سے آؤٹ ہوا ہو۔ پہلی بار 1975ء کے عالمی کپ میں ویسٹ انڈیز کے روئے فریڈرکس آسٹریلیا کے خلاف ہٹ وکٹ ہوئے تھے، وہ بھی عالمی کپ کے فائنل میں۔ ڈینس للی کی گیند پر ہک کھیلتے ہوئے انہوں نے گیند کو تو چھکے کے لیے روانہ کردیا لیکن توازن برقرار نہ رکھ سکے اور وکٹوں میں جا گھسے۔ اس وقت اسکور بورڈ پر صرف 12 رنز موجود تھے۔ بعد ازاں کپتان کلائیو لائیڈ کی یادگار سنچری نے ویسٹ انڈیز کو مقابلہ جتواتے ہوئے پہلا عالمی چیمپئن بھی بنایا لیکن روئے فریڈرکس کا ہٹ وکٹ آج بھی پہلے عالمی کپ کی نمایاں جھلکیوں میں سےایک ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ چکابوا سے قبل عالمی کپ میں ہٹ وکٹ آؤٹ ہونے والے آخری کھلاڑی کا تعلق بھی زمبابوے سے تھا۔ ووسی سبانڈا 2007ء کے عالمی کپ میں آئرلینڈ کے خلاف میچ میں ہٹ وکٹ ہوئے تھے۔

ہم ذیل میں عالمی کپ میں اب تک ہٹ وکٹ ہونے والے تمام کھلاڑیوں کی فہرست پیش کررہے ہیں، امید ہے معلومات میں اضافے کا باعث بنے گی:

عالمی کپ کی تاریخ میں ہٹ وکٹ ہونے والے بلے باز

بلے باز ملک رنز بمقابلہ بمقام بتاریخ
روئے فریڈرکس  ویسٹ انڈیز 7 آسٹریلیا لارڈز 21 جون 1975ء
فرینکلن ڈینس کینیڈا 21 کینیڈا مانچسٹر 13 جون 1979ء
مورس اوڈمبے کینیا 6 ویسٹ انڈیز پونے 29 فروری 1996ء
گیری کرسٹن جنوبی افریقہ 3 ویسٹ انڈیز کراچی 11 مارچ 1996ء
جو ہیرس کینیڈا 9 سری لنکا پارل 19 فروری 2003ء
مورس اوڈمبے کینیا 0 ویسٹ انڈیز کمبرلی 4 مارچ 2003ء
ووسی سبانڈا  زمبابوے 67 آئرلینڈ کنگسٹن 15 مارچ 2007ء
ریگس چکابوا زمبابوے 35 متحدہ عرب امارات نیلسن 19 فروری 2015ء

Facebook Comments