سرفراز احمد ایک ہی اننگز میں کئی سنگ میل عبورکرگئے

آئرلینڈ کے خلاف آخری گروپ مقابلے میں پاکستان کی کارکردگی خاص طور پر سرفراز احمد کی سنچری کا سحر ابھی تک طاری ہے۔ اس ٹورنامنٹ میں کہ جہاں پاکستان کا کوئی بلے باز اس سنگ میل تک نہ پہنچا ہو وہاں ایک ایسے کھلاڑی کا یہ سنگ میل عبور کرنا ایک بڑا کارنامہ ہے، جس سے بہت کم لوگوں کو توقع تھی۔

سرفراز احمد پاکستان کے ابتدائی چاروں مقابلوں میں شریک نہیں تھے، جہاں پاکستان کو بھارت اور ویسٹ انڈیز کے ہاتھوں بدترین شکستیں ہوئیں اور پھر زمبابوے اور متحدہ عرب امارات کے خلاف کامیابیاں حاصل کیں۔ ان مایوس کن ناکامیوں اور غیر موثر فتوحات میں سرفراز دستے کا حصہ نہیں تھے اور جب ناصر جمشید پے در پے ناکام ہوئے تو جنوبی افریقہ جیسے سخت حریف کے خلاف سرفراز احمد کو پہلی بار میدان میں اتارا گیا۔ جہاں 'سیفی' نے 49 گیندوں پر اتنے ہی رنز کی دلیرانہ اننگز کھیلی اور پھر ریکارڈ 6 کیچز پکڑ کر مردِ میدان کا اعزاز حاصل کیا۔ پھر آئرلینڈ کے خلاف پاکستان کے آخری گروپ مقابلے میں انہوں نے اپنے حوالے سے تمام شکوک و شبہات کا خاتمہ کردیا، 124 گیندوں پر 101 رنز کی شاندار اننگز نے نہ صرف انہیں ایک مرتبہ پھر بہترین کھلاڑی کا اعزاز دیا بلکہ کئی ریکارڈ بھی ان کے قدموں میں رکھ دیے۔

سرفراز احمد 8 سال بعد کسی بھی عالمی کپ میں سنچری بنانے والے پہلے پاکستانی بلے بازہیں بلکہ وہ ٹورنامنٹ کی تاریخ سنچری بنانے والے اولین پاکستانی وکٹ کیپر بھی ہیں۔ سرفراز سے پہلے عالمی کپ میں کسی بھی پاکستانی بلے باز کی آخری سنچری 2007ء میں بنائی گئی تھی جب عمران نذیر نے زمبابوے کے خلاف 160 رنز اسکور کیے تھے۔ عالمی کپ میں مجموعی طور پر پاکستان کے 14 بلے بازوں نے سنچریاں بنائی ہیں جن میں سے سعید انور اور رمیز راجہ کو تین، تین بار یہ اعزاز حاصل ہوا ہے۔

عالمی کپ میں سنچریاں بنانے والے پاکستانی بلے باز

بلے باز ملک رنز گیندیں چوکے چھکے بمقابلہ بمقام بتاریخ
سرفراز احمد پاکستان 101* 124 6 0 آئرلینڈ ایڈیلیڈ 15 مارچ 2015ء
عمران نذیر پاکستان 160 121 14 8 زمبابوے کنگسٹن 21 مارچ 2007ء
سعید انور پاکستان 101 126 7 0 بھارت سنچورین یکم مارج 2003ء
سعید انور پاکستان 113* 148 9 0 نیوزی لینڈ مانچسٹر 16 جون 1999ء
سعید انور پاکستان 103 144 11 0 زمبابوے اوول، لندن 11 جون 1999ء
عامر سہیل پاکستان 111 139 8 0 جنوبی افریقہ کراچی 29 فروری 1996ء
رمیز راجہ پاکستان 119* 155 16 0 نیوزی لینڈ کرائسٹ چرچ 18 مارچ 1992ء
عامر سہیل پاکستان 114 136 12 0 زمبابوے ہوبارٹ 27 فروری 1992ء
رمیز راجہ پاکستان 102* 158 4 0 ویسٹ انڈیز ملبورن 23 فروری 1992ء
سلیم ملک پاکستان 100 95 10 0 سری لنکا فیصل آباد 25 اکتوبر 1987ء
رمیز راجہ پاکستان 113 148 5 0 انگلستان کراچی 20 اکتوبر 1987ء
جاوید میانداد پاکستان 103 100 6 0 سری لنکا حیدرآباد 8 اکتوبر 1987ء
ظہیر عباس پاکستان 103* 121 6 0 نیوزی لینڈ ناٹنگھم 20 جون 1983ء
عمران خان پاکستان 102* 133 11 0 سری لنکا لیڈز 16 جون 1983ء

عالمی کپ میں سرفراز احمد سے پہلے کسی بھی پاکستانی وکٹ کیپر کی سب سے بڑی اننگز 63 رنز کی تھی جو معین خان نے 1999ء میں جنوبی افریقہ کے خلاف کھیلی تھی۔ یوں سرفراز پہلے پاکستانی وکٹ کیپر بنے ہیں جنہوں نے سنچری بنائی ہیں۔ یہ سرفراز کے اپنے ایک روزہ کیریئر کی بھی پہلی سنچری اور سب سے بہترین اننگز ہے۔

عالمی کپ میں پاکستانی وکٹ کیپرز کی طویل ترین اننگز

بلے باز ملک رنز گیندیں چوکے چھکے بمقابلہ بمقام بتاریخ
سرفراز احمد پاکستان 101* 124 6 0 آئرلینڈ ایڈیلیڈ 15 مارچ 2015ء
معین خان پاکستان 63 56 6 2 جنوبی افریقہ ناٹنگھم 5 جون 1999ء
عمر اکمل پاکستان 59 71 5 1 ویسٹ انڈیز کرائسٹ چرچ 21 فروری 2015ء
سلیم یوسف پاکستان 56 49 7 0 ویسٹ انڈیز لاہور 16 اکتوبر 1987ء
کامران اکمل پاکستان 55 67 5 0 کینیا ہمبنٹوٹا 23 فروری 2011ء

عالمی کپ 2015ء میں سرفراز احمد کی سنچری کسی بھی وکٹ کیپر کی بنائی گئی ساتویں سنچری ہے۔ ان سے پہلے سری لنکا کے کمار سنگاکارا مسلسل چار سنچریاں جڑ چکے ہیں جبکہ زمبابوے کے برینڈن ٹیلر نے بھی اپنے کیریئر کے اختتام سے پہلے مسلسل دو سنچریاں بنائیں۔

عالمی کپ تاریخ میں وکٹ کیپرز کی سنچریاں

بلے باز ملک رنز گیندیں چوکے چھکے بمقابلہ بمقام بتاریخ
ڈیو ہاؤٹن زمبابوے 142 137 13 6 نیوزی لینڈ حیدرآباد 10 اکتوبر 1987ء
اینڈی فلاور زمبابوے 115* 152 8 1 سری لنکا نیو پلیمتھ 23 فروری 1992ء
راہول ڈریوڈ بھارت 145 129 17 1 سری لنکا ٹاؤنٹن 26 مئی 1999ء
ایڈم گلکرسٹ آسٹریلیا 149 104 13 8 سری لنکا برج ٹاؤن 28 اپریل 2007ء
ابراہم ڈی ولیئرز جنوبی افریقہ 107* 105 8 2 ویسٹ انڈیز دہلی 24 فروری 2011ء
ابراہم ڈی ولیئرز جنوبی افریقہ 134 98 13 4 نیدرلینڈز موہالی 3 مارچ 2011ء
برینڈن میک کولم نیوزی لینڈ 101 109 12 2 کینیڈا ممبئی 13 مارچ 2011ء
کمار سنگاکارا سری لنکا 111 128 12 2 نیوزی لینڈ ممبئی 18 مارچ 2011ء
کمار سنگاکارا سری لنکا 105* 76 13 1 بنگلہ دیش ملبورن 26 فروری 2015ء
کمار سنگاکارا سری لنکا 117* 86 11 2 انگلستان ویلنگٹن یکم مارچ 2015ء
برینڈن ٹیلر زمبابوے 121 91 11 4 آئرلینڈ ہوبارٹ 7 مارچ 2015ء
کمار سنگاکارا سری لنکا 104 107 11 0 آسٹریلیا سڈنی 8 مارچ 2015ء
کمار سنگاکارا سری لنکا 124 95 13 4 اسکاٹ لینڈ ہوبارٹ 11 مارچ 2015ء
برینڈن ٹیلر زمبابوے 138 110 15 5 بھارت آکلینڈ 14 مارچ 2015ء
سرفراز احمد پاکستان 101* 124 6 0 آئرلینڈ ایڈیلیڈ 15 مارچ 2015ء

Facebook Comments