جیمز پیٹن سن

بھارت کے "پانچ مہان" آسٹریلیا کی "تیز مثلث" کے سامنے ڈھیر، پہلا ٹیسٹ آسٹریلیا کے نام

آسٹریلیا کے ناتجربہ کار اور نو آموز گیند بازوں نے بھارتی بلے بازوں کو چھٹی کا دودھ یاد دلا دیا۔ گمبھیر، سہواگ، ڈریوڈ، سچن اور لکشمن پر مشتمل "Furious Five" بھی آسٹریلیا کے باؤلرز کا کچھ نہ بگاڑ

[ریکارڈز] سال 2011ء کے بہترین ٹیسٹ گیند باز

سال 2011ء کو ٹیسٹ کرکٹ میں گیند بازوں کا سال قرار دیا جائے تو بے جا نہ ہوگا، خصوصاً اسپنرز اور ڈیبوٹنٹس، یعنی ٹیسٹ کیریئر کا پہلا مقابلہ کھیلنے والے، باؤلرز نے اس سال حیران کن کارکردگی پیش کی ہے۔

ڈیبوٹنٹ باؤلرز کے لیے یادگار سال، پیٹن سن نے آسٹریلیا کو پہلا ٹیسٹ جتا دیا

2011ء، جو اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے نوجوان گیند بازوں کے لیے یادگار ترین سال ثابت ہوا ہے، میں تیز گیند بازی کے عالمی افق پر ایک اور ستارے نے جنم لیا ہے جس نے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ مقابلے میں حریف