[ریکارڈز] زیرو کا ہیرو کون؟

0 194

بنگلہ دیش کے دورۂ ویسٹ انڈیز کا آغاز پہلے ٹیسٹ میں ہی بُری طرح ناکامی کے ساتھ ہوا ہے۔ مسلسل دو ٹیسٹ میچز میں ایک اننگز میں چھ بلے بازوں کا صفر پر آؤٹ ہونا ظاہر کرتا ہے کہ بنگلہ دیش ٹیسٹ کرکٹ کے مسائل بہت گہرے ہیں۔

نارتھ ساؤنڈ میں صفر کی ہزیمت سے دوچار ہونے والوں میں بنگلہ دیش کے باؤلر خالد احمد بھی شامل تھے جو پہلی اننگز میں تو صفر پر آؤٹ ہی ہو گئے البتہ دوسری میں خوش قسمت تھے کہ ٹیم ان سے پہلے ہی آل آؤٹ ہو گئی اور وہ صفر کے ساتھ ناقابلِ شکست میدان سے واپس آئے۔

یہ مسلسل گیارہویں اننگز تھی کہ جس میں خالد احمد ایک رن تک نہیں بنا پائے۔ انہوں نے اب تک 8 ٹیسٹ میچز کھیلے ہیں، جن کی 13 اننگز میں صرف 4 رنز بنائے ہیں۔

فروری 2019ء نیوزی لینڈ کے خلاف ہملٹن ٹیسٹ کی دوسری اننگز میں خالد احمد نے ناٹ آؤٹ 4 رنز بنائے تھے، جس کے بعد سے اب تک 11 اننگز میں ایک رن بھی نہیں بنا پائے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ خالد ہملٹن ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں بھی صفر پر آؤٹ ہوئے تھے، یعنی 13 میں سے 12 اننگز میں اُن کے نام کے آگے صفر ہی کا ہندسہ لکھا گیا ہے۔ وہ اپنے کیریئر میں 9 مرتبہ صفر پر آؤٹ ہوئے اور تین بار اسی اسکور پر ناٹ آؤٹ رہے ہیں۔

خالد احمد کا ٹیسٹ بیٹنگ کیریئر

میچزرنزبہترین اننگزاوسطصفر
844*0.449

بنگلہ دیشی لوئر آرڈر کو دیکھ کر تو واقعی پرانے زمانے کی کرکٹ کی یاد آ جاتی ہے۔ عبادت حسین: 26 اننگز میں اوسط صرف 1.00 ، مستفیض الرحمٰن 22 اننگز میں 4.4 اور خالد احمد تو 13 اننگز میں 0.44۔

اس کے بعد ذہن میں دو سوالات ابھرتے ہیں: ایک ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ مرتبہ صفر پر کون آؤٹ ہوا ہے؟ اور دوسرا مسلسل صفر پر آؤٹ ہونے کا ریکارڈ کس کے پاس ہے؟

کرکٹ تاریخ میں سب سے زیادہ صفر پر آؤٹ ہونے کا ریکارڈ ویسٹ انڈیز کے کورٹنی واش کے پاس ہے۔ اپنے 185 اننگز پر محیط کیریئر میں واش 43 مرتبہ صفر کی ہزیمت کا نشانہ بنے۔

چلیں، واش تو ایک پکے ٹھکے باؤلر تھے لیکن دوسرے نمبر پر تو وہ کھلاڑی ہیں جن کے کیریئر میں ایک سنچری اور 13 نصف سنچریاں شامل ہیں، اس کے باوجود وہ اپنی 226 اننگز میں 39 مرتبہ صفر پر آؤٹ ہوئے ہیں۔ ہم بات کر رہے ہیں انگلینڈ کے اسٹورٹ براڈ کی۔ ویسے براڈ اب بھی کرکٹ کھیل رہے ہیں، ہو سکتا ہے جاتے جاتے واش کا عالمی ریکارڈ ہی توڑ دیں۔

پھر نام آتا ہے تاریخ کے عظیم ترین باؤلر کا، اتنے عظیم کہ جو شاید بیٹنگ کو حرام سمجھتے تھے، 104 اننگز میں 36 صفر کے ساتھ نیوزی لینڈ کے کرس مارٹن کو "صفر کا بادشاہ" کہتے ہیں۔ کرس اپنے کیریئر میں 27 مرتبہ کلین بولڈ ہوئے جن میں سے 20 بار ان کی گِلیاں صفر پر اُڑیں۔

‏35 صفر آسٹریلیا کے گلین میک گرا کے پاس بھی ہیں جبکہ ان کے ہم وطن شین وارن اور بھارت کے ایشانت شرما کیریئر میں 34، 34 مرتبہ صفر پر آؤٹ ہوئے ہیں۔

ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کے لیے سب سے زیادہ "ڈک" دنیش کنیریا کے پاس ہیں، جو 84 اننگز میں 25 مرتبہ صفر کا نشانہ بنے۔

ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ صفر پر آؤٹ ہونے والے بلے باز

میچزرنزبہترین اننگزاوسطسنچریاںنصف سنچریاںصفر
کورٹنی واش13293630*7.540043
اسٹورٹ براڈ154343016918.3411339
کرس مارٹن7112312*2.360036
گلین میک گرا124641617.360135
ایشانت شرما105785578.260134
شین وارن14531549917.3201234
مرلی دھرن13312616711.670133
جیمز اینڈرسن1711278819.320130
ظہیر خان9212317511.950329
مارون ڈلن38549438.440026

اب چلتے ہیں دوسرے سوال کی طرف کہ مسلسل اننگز میں صفر پر آؤٹ ہونے کا "کارنامہ" کس نے انجام دیا ہے؟ یہ آسٹریلیا کے رابرٹ ہالینڈ تھے جو 1985ء میں مسلسل پانچ اننگز میں صفر  پر آؤٹ ہوئے تھے۔

ٹیسٹ کرکٹ میں مسلسل صفر پر آؤٹ ہونے کا ریکارڈ

رنزبمقابلہبمقامبتاریخ
رابرٹ ہالینڈ0 انگلینڈبرمنگھماگست 1985ء
0 انگلینڈبرمنگھماگست 1985ء
0 نیوزی لینڈبرسبیننومبر 1985ء
0 نیوزی لینڈبرسبیننومبر 1985ء
0 نیوزی لینڈسڈنینومبر 1985ء
اجیت آگرکر0 آسٹریلیاایڈیلیڈدسمبر 1999ء
0 آسٹریلیامیلبرندسمبر 1999ء
0 آسٹریلیامیلبرندسمبر 1999ء
0 آسٹریلیاسڈنیجنوری 2000ء
0 آسٹریلیاسڈنیجنوری 2000ء
محمد آصف0 بھارتفیصل آبادجنوری 2006ء
0 بھارتکراچیجنوری 2006ء
0 سری لنکاکولمبومارچ 2006ء
0 سری لنکاکانڈیاپریل 2006ء
0 انگلینڈاوولاگست 2006ء

ان کے بعد بھارت کے اجیت آگرکر اور پاکستان کے محمد آصف نے مسلسل پانچ اننگز میں صفر پر آؤٹ ہونے کا یہ عالمی ریکارڈ برابر کیا۔ بھارت کے اجیت آگرکر 1999ء میں آسٹریلیا کے دورے پر گئے اور مسلسل پانچ اننگز میں صفر کی ہزیمت سے دوچار ہوئے۔

جبکہ پاکستان کے محمد آصف 2006ء میں اس ہزیمت کا نشانہ بنے۔ لیکن بنگلہ دیش کے ٹَیل اینڈرز دیکھیں تو لگتا ہے اس ریکارڈ کو خطرہ لاحق ہے۔ ہو سکتا ہے خالد احمد مسلسل چھ اننگز میں صفر پر آؤٹ ہونے کا نیا عالمی ریکارڈ بنا ڈالیں؟