ایلن کی سنچری رہ گئی، لیکن نیوزی لینڈ کامیاب

0 354

برج ٹاؤن میں نہ فن ایلن اپنی پہلی ون ڈے سنچری بنا سکے اور نہ ہی ٹم ساؤتھی ون ڈے انٹرنیشنل میں چوتھی بار پانچ وکٹیں لینے کا کارنامہ انجام نہ دے سکے، لیکن پھر بھی کامیابی نیوزی لینڈ کے نام رہی جس نے دوسرا ون ڈے جیت کر سیریز 1-1 سے برابر کر دی ہے۔

نیوزی لینڈ کا دورۂ ویسٹ انڈیز 2022ء - دوسرا ون ڈے انٹرنیشنل

ویسٹ انڈیز بمقابلہ نیوزی لینڈ

‏19 اگست 2022ء

کینسنگٹن اوول، برج ٹاؤن، بارباڈوس

نیوزی لینڈ 50 رنز سے جیت گیا

نیوزی لینڈ 🏆212
فن ایلن96117
ڈیرل مچل4163
ویسٹ انڈیز باؤلنگامرو
کیون سنکلیئر8.20414
جیسن ہولڈر92243

ویسٹ انڈیز 161
یانک کیریا5284
الزاری جوزف4931
نیوزی لینڈ باؤلنگامرو
ٹم ساؤتھی71224
ٹرینٹ بولٹ61183

‏212 رنز کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز دراصل میچ اسی وقت ہار گیا تھا جب صرف 27 رنز پر اس کی چھ وکٹیں گر گئی تھیں۔ خطرہ تھا کہ وہ اپنے کم ترین ون ڈے اسکور 54 سے بھی پہلے ڈھیر ہو جائے گا، لیکن بارش کے وقفے نے سنبھلنے کا موقع دے دیا۔ جس کے بعد محض اپنا دوسرا ون ڈے کھیلنے والے یانک کیریا نے معاملات کو سنبھال لیا۔ انہوں نے اپنی پہلی ون ڈے ففٹی بنائی اور الزاری جوزف کے ساتھ نویں وکٹ پر 85 رنز کی شراکت داری بھی کی۔ وہ اسکور کو 72 سے 157 رنز تک لے گئے جہاں جوزف 31 گیندوں پر 49 بنا کر آؤٹ ہو گئے یعنی اپنی پہلی نصف سنچری سے صرف ایک قدم کے فاصلے پر۔

کیریا آخری بیٹسمین تھے جو 84 گیندوں پر 52 رنز بنا کر پویلین لوٹے۔ یوں ویسٹ انڈیز 161 رنز پر آل آؤٹ ہو گیا اور ڈک ورتھ لوئس میتھڈ کے تحت 50 رنز سے یہ میچ ہار گیا۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹرینٹ بولٹ اور ٹم ساؤتھی نے بڑی تباہ کن باؤلنگ کی۔ انہوں نے ابتدائی 10 اوورز میں ہی ویسٹ انڈیز کی چھ وکٹیں حاصل کر لی تھی۔ ساؤتھی نے چار اور بولٹ نے 3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

قبل ازیں، کپتان کین ولیم سن کی عدم موجودگی میں نیوزی لینڈ کا آغاز بھی اچھا نہیں تھا۔ صرف 31 رنز پر اس کی تین وکٹیں گر چکی تھیں۔ خود قائم مقام کپتان ٹام لیتھم صفر پر ہی وکٹ دے گئے۔ تب فن ایلن نے چوتھی وکٹ پر ڈیرل مچل کے ساتھ 84 رنز کا اضافہ کیا اور نیوزی لینڈ کی اننگز کو دوبارہ پٹری پر ڈال دیا۔

یہ شراکت داری اختتام کو پہنچی تو کچھ ہی دیر میں نیوزی لینڈ کی اننگز پھر لڑکھڑا گئی۔ اگلے تین بلے بازوں کی اننگز دہرے ہندسے میں بھی داخل نہیں ہوئی، یہاں تک کہ یہاں تک کہ آخری 10 اوورز کا مرحلہ شروع ہوتے ہی ایلن بھی نروس نائنٹیز کا شکار ہو گئے۔ وہ 96 رنز پر میدان سے لوٹے، یعنی سنچری سے صرف چار رنز کے فاصلے پر۔

نیوزی لینڈ 165 رنز پر سات وکٹوں سے محروم ہو چکا تھا اور اننگز کسی بھی وقت ختم ہو سکتی تھی۔ یہاں مچل سینٹنر کے 26 اور ٹرینٹ بولٹ کے 16 رنز نے نیوزی لینڈ کو 200 کا ہندسہ پار کروا دیا۔ دونوں نے آخری وکٹ نے 31 رنز کا اضافہ بھی کیا۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے کیون سنکلیئر نے چار اور جیسن ہولڈر نے تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

اب سیریز کا تیسرا، آخری و فیصلہ کن ون ڈے اتوار 21 اگست کو کھیلا جائے گا۔