بھارت آئرلینڈ کے ہاتھوں بال بال بچ گیا

بھارت آئرلینڈ کے خلاف دوسرا ٹی ٹوئنٹی بھی جیت گیا، بلکہ یہ کہنا زیادہ بہتر ہے کہ شکست سے بال بال بچ گیا۔ آئرلینڈ نے دوسرے ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں ورلڈ نمبر وَن بھارت کو ناکوں چنے چبوا دیے۔ معاملہ آخری گیند تک جا پہنچا، جہاں آئرلینڈ کو

وہاب ریاض، ایک بہترین باؤلر یا ایک بدترین باؤلر؟

یہ سال 2015ء تھا، وہ سال جب پاکستان کرکٹ ایک دوراہے پر کھڑی تھی۔ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل کے بعد جو بے یقینی پیدا ہوئی تھی، وہ چھٹ چکی تھی اور سب کچھ "معمول" پر آ چکا تھا۔ "معمول" مطلب وہی کوچ، کپتان اور کھلاڑیوں کے اختلافات اور درونِ خانہ

بنگلہ دیش ایک اور سیریز ہار گیا

بنگلہ دیش کی عادتیں نہیں بدلیں، تو نتیجہ کیسے بدلتا؟ ٹھیک ایک ماہ پہلے میر پور میں جن غلطیوں کی وجہ سے سری لنکا کے خلاف فیصلہ کن ٹیسٹ ہارا تھا، اب ڈھاکا سے ہزاروں کلومیٹرز دُور سینٹ لوشیا میں بھی وہی غلطیاں دہرائیں، تو نتیجہ بھی وہی نکلنا

انگلینڈ کا یادگار کلین سوئپ، نیوزی لینڈ ناکام و نامراد

انگلینڈ نے تیسرے ٹیسٹ میں بھی ایک بڑے ہدف کا کامیابی سے تعاقب کر کے سیریز ‏3-0 سے جیت لی ہے۔ جونی بیئرسٹو نے ایک اور دھواں دار اننگز کھیلی، جو روٹ نے ایک مرتبہ پھر اپنی اہمیت اور اہلیت ثابت کی اور جیک لیچ نے میچ میں 10 وکٹیں حاصل کر

سیریز میں سب سے زیادہ رنز، ڈیرل مچل ریکارڈ بُک میں

نیوزی لینڈ ورلڈ ٹیسٹ چیمپیئن ہے جبکہ انگلینڈ کا حال یہ ہے کہ پچھلے 20 میں سے صرف 4 ٹیسٹ میچز ہی جیت پایا تھا۔ کپتان اور کوچ سب کی چھٹی ہو گئی اور ایک نئے سیٹ اپ کے ساتھ وہ نیوزی لینڈ کے خلاف میدان میں اترا اور پھر 'چمتکار' کر دیا۔ نیوزی

[ریکارڈز] بیئرسٹو اور اوورٹن کی کمال شراکت داری

ایک کے بعد دوسرا میچ اور پے در پے سیریز ہارنے کے بعد انگلینڈ کے لیے نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز بہت اہمیت رکھتی تھی۔ حالات یہ تھے کہ جو روٹ کی کپتانی تک چلی گئی۔ اِن حالات میں نئے کپتان اور نئے کوچ کے ساتھ انگلینڈ میدان میں اترا اور پھر کمال

[آج کا دن] جب ملتان بنا سلطان

میراتھون میں اِس کی کوئی اہمیت نہیں ہوتی کہ دوڑ کے آغاز پر سب سے آگے کون ہے؟ اصل بات یہ ہے کہ آخر میں کون سب سے آگے رہتا ہے۔ ٹی ٹوئنٹی لیگز میں ایک لحاظ سے کرکٹ کی میراتھون ہیں۔ مہینے سے بھی زیادہ جاری رہنے والے کرکٹ سیزن میں جو آخر میں

[آج کا دن] جب پاکستان نے گال کا قلعہ فتح کر لیا

ٹیم پاکستان کا اگلا مشن ہے دورۂ سری لنکا، جہاں 16 جولائی سے دو ٹیسٹ میچز کا سیریز کا آغاز ہوگا گال کے میدان پر۔ وہی میدان جہاں 2000ء میں پاکستان نے ایک تاریخی کامیابی حاصل کی تھی۔ یہ وہ زمانہ تھا جب نہ صرف پاکستان بلکہ سری لنکا بھی دنیا کی

ہنری نکلس کا انوکھا آؤٹ، تاریخ کے بد قسمت ترین بلے باز؟

نیوزی لینڈ کے ہنری نکلس اور ڈیرل مچل کے سامنے وہی صورت حال تھی، جس کا وہ بارہا سامنا کر چکے ہیں۔ صرف 83 رنز پر چار وکٹیں گر جانے کے بعد جیسے ہی حالات قابو میں نظر آنے لگے، تب وہ ہو گیا جو کسی کے بھی وہم و گمان میں نہیں تھا۔ یہ ہیڈنگلی

[آج کا دن] جب پاکستان ٹی ٹوئنٹی کا بادشاہ بنا

یہ 21 جون 2009ء کا دِن تھا اور لارڈز کا وہی میدان کہ جہاں پاکستان 10 سال پہلے، اسی مہینے میں، ورلڈ کپ 1999ء کا فائنل ہارا تھا، اتنی بُری طرح کہ تاریخ میں کسی کو اِس طرح شکست نہیں ہوئی۔ لیکن ایک دہائی گزرنے کے بعد یہاں جوش و خروش کا عالم